حسن قدرت

سبز فطرت نے

خوبصورت خوبصورت آسمان
وہ قدرت میٹھی شیر ین

حسن قدرت یہان میں
اسکی خوبصورتی کی

طرف سے سوچ رہا کہ
سبز فطرت نے

موسم بہار کے پھولوں کو چوما
چمک اس کویل کا 

میٹھا گیت کے ساتھ

گونجتی نہریں
پتھر پر عار کے بیٹھی ہے

 اس کے قریب وہ رسیاہ
فطرت کی خوبصورتی کے لئے 

اسکی تلاش میں یہان ا گیا
موسم بہار کی
 دھوپ میں

روشنی سونے کے تاج کی طرح 

چمکتی ھوی
خوش ھوں 
مجھے یہاں

دیکھ لانے کے لئے لائ 

وہ محت سے


چاندنی میں وہ 

خوبصورت بڑھ کر گلاب
اسکے نازک پنک ریشمی

چمکدار بال رشم ے ملبوس
گلاب پانی سے باہرا گیا گانا ھوا 
میں خوبصورت ہوں
آہستہ سے پکڑ و مجھے
 آہستہ سے مجھے چومنے
پیارا سا میٹھا خوشبو دار 
میٹھی گانے کی آواز ا رھی
چاندنی جیسا میں روشن
صبح کے جسا میں تازہ

خوبصورت شہزادی کے مانند

میرے لئے اوہ خوشبو کھولیں
خوبصورت خوبصورت آسمان

 

 

 

View ruby's Full Portfolio